I was bored, randomly wrote this.


نقاب کے اندر رہتے  ہوۓ اس نے   اگر کچھ باتیں سیکھیں تو اس میں سے ایک  یہ تھی کہ لوگ اپ کو بہت جلدی جج   کرتے ہیں ۔  اپ کے بارے میں بہت جلدی ازیوم کرلیتے ہیں۔ اکیلے بیٹھے ہوۓ احساس کمتری نہیں ہوتی پر احساس محرومی ضرور ہوئ۔  دوستوں کی۔ اس کے گھر کا    ماحول  ایسا      نہیں  تھا کہ ہر ایرے غیرے نتھو  گیرے   سے فری ہوجاۓ۔  نہ ہی  اسے یونیورسٹی    سے  کہیں اور جانے کی اجازت تھی۔               
اج اسکی دوستیں یونیورسٹی    کے پاس کسی  مال میں گھومنے  گیئں      تھیں۔ اور وہ          تنہا    ایک    بینچھ     پر    بیٹھ    کر   اپنی  گاڑی        کا     انتظار      کر  رہی  تھی ۔      انتظار       کرنا مشکل  نہیں ہوتا   جب کوئ  ساتھ  ہو۔   تنہا  انتظار       کرنا  زیادہ    مشکل تھا۔    پر اسکے  پاس  اپنے  خیال      تھے  ۔ ان میں کھو جانے کا موقع تھا۔   کوئ ڈسٹراکشن نہیں تھی۔     جو  بیچ       بیچ    میں اسے     اپنے     خیالوں  سے نکال  کر  اصل  دنیا   میں   لے   اۓ۔   اصل     زندگی    سے اسے   بھاگنا         نہیں   تھا  ۔      پر     اسکا      مطلب   یہ  تھا   کہ  اسے    اپنے     وجود   کا    کچھ  حصصا انہیں    دینا   پڑتا        اور   اپنے  وجود   کو  ادھر  ادُھر   بکھیرنا     اس  کی   عادت  نہیں تھی۔    وہ  نہیں چاہتی  تھی  کہ  اُسکے   خیالات    سے  کوئ  واقف ہو ۔ یا  اسے  کوئ  جانے  ۔  وہ  اپنے              معاملے میں   بہت   محتاط  تھی۔   شاید    یہی  اس      کی    بے وقوفی  تھی  اور  شاید  یہی   اسکی        سمجھ داری۔     
Advertisements